انگلش بولنے والا لاکھ پتی بھکاری نیب کے ہتھے چڑھ گیا

انگلش بولنے والا لاکھ پتی بھکاری نیب کے ہتھے چڑھ گیا

جمع کردہ رقم اور ایک کروڑ کی بیمہ پالیسی بچوں کے نام کرناچاہتا ہوں، نیب سے ٹیکس نہ کاٹنے کی اپیل

 جس شخص کا کوئی ذریعہ معاش نہ ہو وہ بھیک مانگنے پر مجبور ہو جاتا ہے جسے بھکاری کہتے ہیں۔عام طور پر بھکاری ایسے شخص کو کہا جاتا ہے کہ جو اپنی بنیادی ضروری پوری کرنے کے لیے لوگوں کے سامنے پاتھ پھیلانے پر مجبور ہو جائے مگر کچھ افراد کے لیے یہ زیادہ کمانے والا پیشہ ہے۔ایسا ہی ایک شخص ملتان میں بھیک مانگتا ہے وہ بھی انگلش بول کر جو کہ درحقیقت پہلے ہی لکھ پتی ہے۔تاہم ملتان کا یہ لاکھ پتی بھکاری نیب کے ہتھے چڑھ گیا،ایک گھنٹہ پوچھ گچھ کی گئی۔ تفصیل کے مطابق ملتان میں انگلش بول کر بھیک مانگنے والا بھکاری نیب کے ہتھے چڑھ گیا ۔ بتایا گیا ہے کہ فقیر شوکت کو ڈیم فنڈ میں 10 ہزار روپے جمع کرانا مہنگا پڑ گیا۔ ڈیم فنڈ میں دس ہزار جمع کرانے پر نیب نے بھکاری شوکت کو طلب کر لیا اور ایک گھنٹے تک پوچھ گچھ کی گئی۔

ملتان کا بھکاری انگلش بول کر بھیک مانگتا ہے جو ایسے دوسرے بھکاریوں سے منفرد دیکھاتی ہے ۔ قابل غور بات یہ بھی ہے کہ فقیر شوکت نے ایک کروڑ روپے کی بیمہ پالیسی کرا رکھی ہے اور لاکھوں روپے کی رقم جمع کر رکھی ہے۔ بھکاری شوکت کا کہنا ہے کہ 4 سال سے انگلش بول کر بھیک مانگ رہا ہوں۔ میں ملتان کی سڑکوں کا شہزادہ ہوں۔ بھکاری شوکت نے چیئرمین نیب سے اپیل کی ہے کہ میرا کوئی بے نامی اکاونٹ نہیں ہے ، میرے پیسوں سے ٹیکس کی مد میں کٹوتی نہ کی جائے، جتنے پیسے جمع ہوتے ہیں بنک اکاونٹ میں جمع کرا دیتا ہوں۔وزیراعظم عمران خان سے اپیل کرتے ہوئے اس کا کہنا تھا کہ میں صر ایک نوکری کا متلاشی ہوں، عمران خان صاحب مجھے نوکری دینے کا اعلان کریں۔ شوکت کا مزید کہنا تھا کہ ساری رقم او رایک کروڑ کی بیمہ پالیسی بچوں کے نام کرنا چاہتا ہوں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *