Reopening Army Act Amendment Bill For Discussion: PPP’s Success: Naz Baloch

Army Act Amendment Bill

کراچی پاکستان  پیپلز پارٹی کی  رہنما ناز بلوچ نے کہا ہے کہ آرمی ایکٹ ترمیمی بل کو دوبارہ بحث کے لیے بھیجنا  پیپلز پارٹی کی کامیابی ہے،  پیپلز پارٹی نے ہمیشہ جمہوریت کا ساتھ دیا ہے، آرمی ترمیمی ایکٹ بل کی حمایت پی ٹی آئی کو خوش کرنے کے لیے نہیں بلکہ قومی مفادات کی وجہ سے کی۔

Pak Air Force plane crashes

نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے ناز بلوچ کا کہنا تھا کہ   پیپلز پارٹی کا ہمیشہ سے مؤقف رہا ہے کہ پارلیمنٹ کے ذریعے ہی تبدیلی لانے کی کوشش کی جائے اور جمہوری طریقہ اختیار کیا جائے، ہر سیاسی جماعت یہ کہتی ہے کہ دھاندلی ہوئی ہے تاہم الیکٹورل ریفارمز کی ضرورت ہے تاکہ بعد میں کوئی جماعت دھاندلی کا الزام عائد نہ کرے۔ اس کے لیے حکومت پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ سنجیدگی سے قانون سازی پر عملدرآمد کرے۔

اُنہوں نے کہا کہ  آرمی ایکٹ ترمیمی بل کو دوبارہ بحث کے لیے بھیجنا  پیپلز پارٹی کی کامیابی ہے،ہم یہی چاہتے تھے کہ بل کو پاس کرنے کے لیے جمہوری طریقہ اپنایا جائے،  پیپلز پارٹی چاہتی تھی کہ قانون سازی میں کوئی خم باقی نہ رہ جائے جس کی وجہ سے بعد میں سبکی اٹھانا پڑے،  پیپلز پارٹی نے بل کے لیے مشاورت کا مشورہ دیا تھا اور قانون سازی میں اپنا حصہ ملانے کا اعلان کیا تھااور یہی جمہوریت کا حسن ہے۔

اُنہوں نے کہا کہ  آرمی ترمیمی ایکٹ بل کی حمایت پی ٹی آئی کو خوش کرنے کے لیے نہیں بلکہ قومی مفادات کی وجہ سے کیا ہے،  پیپلز پارٹی جو ترمیم لانا چاہتی تھی اس پر پارٹی نے کام کیا اور اپنی رائے دینا سب کا حق ہے۔ناز بلوچ کا کہنا تھا کہ ہم نے

The Army Act Amendment Bill passed unanimously in the National Assembly

نیب کے قوانین میں بھی ترمیم لانے کی کوشش کی تھی کیونکہ نیب کے قوانین آمر کے بنائے گئے تھے جس میں مسلم لیگ ن نے ہمارا ساتھ نہیں دیا جس کا ان کو بعد میں پچھتاوا بھی تھا،سیاسی پارٹیاں اپنی غلطیوں سے سیکھتی ہیں اور یہی جمہوری عمل ہے، اقتدار صرف حکمرانی کرنا نہیں ہوتا بلکہ یہ ایک ذمہ داری ہوتی ہے۔

News :مزید

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *